ریڈیو ویریتاس ایشیاء امن اور دوستی کا پیامبر ہے - بشپ جوزف ارشد

ریڈیو ویریتاس ایشیاء اْردو سروس کی سولہویں لسنرز کانفرنس

لاہور:(رپورٹ: ارم عمران)25ستمبر 2016 کو ریڈیو ویریتاس ایشیاء اْردو سروس کی سالانہ 16ویں کانفرنس کا انعقاد کیا گیا۔جس کی صدارت قومی کمیشن برائے ابلاغِ عامہ کے چئیرمین تقدس مآب بشپ جوزف ارشد نے کی۔جبکہ دیگر مہمانانِ گرامی میں مسز انیلا شکیل (ڈپٹی کنٹرولر ریڈیو پاکستان لاہور) اور جناب برگیڈئیر سائمن (ریٹائرڈ)تھے۔ ۔ تقدس مآب بشپ جوزف ارشد نے باقاعدہ طور پر کانفرنس کے آغاز کا اعلان کیااورسالانہ 16ویں لسنرزکانفرنس کی شمع روشن کی ۔نیز مہمانانِ گرامی اور ڈائریکٹر اْردو سروس فادر قیصر فیروز کے ہمراہ سال 2017 کے موضوع ’’اتحاد : وسیلہء امن‘‘کی رونمائی کی۔سال2017 کے پروگراموں میں اسی موضوع پر روشنی ڈالی جائے گی ۔ ملک بھر سے اس کانفرنس میں تقریباً 200 افراد نے شرکت کی۔

روشنی ڈالی جائے گی ۔ ملک بھر سے اس کانفرنس میں تقریباً 200 افراد نے شرکت کی۔ اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے تقدس مآب بشپ جوزف ارشد نے ریڈیو ویریتاس ایشیاء اْردو سروس کی اس خدمت کو ایک انمول تجربہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ کوئی کام یا پیشہ نہیں بلکہ مشن ،خدمت،بلاہٹ،ذمہ داری،زندگی ،سلامتی اور پیار ہے۔جس کو پھیلانے سے زندگی میں تبدیلی آتی ہے۔ اور امن کی راہیں مزید ہموار ہوتی ہیں۔ اگر انسان کے اندر امن ہے تو وہ جہاں بھی جائے گا امن پھیلائے گا اور اگر اْس کے اندر انتشار ہے تو وہ ہر جگہ انتشار پھیلائے گا۔ اس لیے ضروری ہے کہ کہ سماجی امن قائم کرنے میں ہر انسان اپنا اپنا حصہ ڈالے۔انہوں نے اْمید ظاہر کی کہ ہم سب ملکر اتحاد کی فضا قائم کرنے سے امن کی راہیں مزید ہموارکرنے میں ضرور کامیاب ہوں گے۔ تقدس مآب بشپ جوزف ارشد نے

فادر قیصر فیروز کوریڈیوویریتاس ایشیا اْردو سروس کے نئے ڈائریکٹر کی ذمہ داریاں سنبھالنے پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ اِن کی قیادت میں ریڈیو ویریتاس ایشیا ء اُردو کے سننے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے ۔ فادر قیصر فیروز نے سال 2017کے موضو ع پرروشنی ڈالتے ہوئے کہاکہ جس دنیا میں ہم رہ رہے ہیں یہ زبان ،ثقافت ،مذہب ،مشرق ، مغرب،شمال ، جنوب،پہلی اور تیسری دنیا کے نام پرایک بہت بڑے پیمانے پر تقسیم کا شکار ہے۔اس تقسیم کا حل کیا ہے؟ہم کیسے متحد ہوسکتے ہیں؟ پاپائے اعظم جان پال دوم نے کہا تھا کہ’’ ہم تمام انسان ایک ہی انسانی خاندان کے ممبران ہیں ‘‘۔ اس پات پر مزید روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ اس سے بہتر کوئی اور فلاسفی نہیں ہو سکتی جو تمام انسانوں کومتحد کر سکتی ہے۔صلح اور اتحاد ہی سماجی امن اور ہم آہنگی کا بہترین راستہ ہیں۔ اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے فادر موصوف نے مزید کہا کہ اس موضوع کے انتخاب کی سب سے بڑی اور اہم وجہ وقت کی اہم ضرورت ہے۔کیونکہ حالات دن بہ دن بگڑتے جا رہے ہیں۔وقت ہاتھوں سے سرکتی ریت کی طرح نکلتا جا رہا ہے۔ہم وقت کو روک تو نہیں سکتے مگر وقت کے مطابق خود کو بہترین سانچے میں ڈھال کر اسے اپنے لیے اور دوسروں کے لیے بہترین بنا سکتے ہیں۔گزشتہ 29 سالوں میں اْردو سروس نے پوری دنیا میں سامعین کے دلوں میں امن ،سچائی ،محبت ،سلامتی اور بھائی چارے کے جذبات پیدا کیے۔جنکی بدولت امن کے لیے نئے سویروں کا آغاز ہوا۔اب وقت ہے کہ ہم اتحاد کی فضا کو بلند کریں تاکہ امن کے لیے اور زیادہ بڑھ چڑھ کر کام کریں۔فادر قیصر فیروز نے پروگرام گائیڈ 2017 میں دو نئے پروگرام؛ 1۔ امن کے سفیر ۔2۔ اتحاد کے نقیب کا تعارف پیش کرتے ہوئے کہا کہ یہ پروگرام سال 2017 کے موضوع کا پرچار کریں گے۔

برگیڈیئر سائمن (ریٹائرڈ)، ریکٹر سینٹ میریز کالج، راولپنڈی، نے کہاکہ امن ، محبت اور بھائی چارے کی اس وقت دنیا میں اشد ضرورت ہے اور خاص طور پر پاکستان میں ۔اس لیے ہمیں سب سے پہلے اتحاد قائم کرنے کی ضرورت ہے۔ہر سرحد ،ذات پات ، اور مذاہب سے بالا تر ہو کر انسانیت کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔اس لیے ہمیں یہ چاہیے کہ ہم متحد ہو جائیں اور اس کام کے لیے بارش کا پہلا قطرہ ہم خود بنیں۔تاکہ ہمارے اس کارواں میں اورساتھی بھی خوشی سے شریک ہوجائیں۔اور امن کے لیے اپنی کوششیں اور اعمال ہمیشہ جاری و ساری رکھیں۔نیز انہوں نے اس موضوع کے انتخاب کو خو ب سراہا۔

مہمانِ گرامی انیلا سلیم(اسٹیشن انچارچ ۔ریڈیو پاکستان) نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ریڈیو ویریتاس دراصل ایک ریڈیو اسٹیشن نہیں بلکہ ایک خدمت ہے۔جو وہ عرصہ دراز سے اپنے دوستوں اور چاہنے والوں کی کر رہا ہے۔اور یہ خدمت نہایت پْرمعنی اوراہم ہے۔ نیز انہوں نے موضوع کو سراہتے ہوئے کہا کہ میں اْمید کرتی ہوں کہ ہرسال کی طرح یہ موضوع بھی سامعین کی زندگیوں میں ضرور سرایت کرے گا اور اْردو سروس ضرور کامیاب ہوگی۔اور ترقی کی منازل طے کرتی چلی جائے گی۔

تقدس مآب بشپ جوزف ارشد نے فادر قیصر فیروز کے ہمراہ تمام شرکا میں تحائف اور سرٹیفیکیٹس تقسیم کئے۔اور شرکاء کے لیے خصوصی تحائف:2017کا کیلنڈراورپروگرام گائیڈ ،فوٹو فریم ،پین اور نیوز لیٹر کی رونمائی کی۔جس کے بعد یہ تمام اشیاء شرکاء میں تقسیم کی گئیں۔

کانفرنس کے شرکاء نے اپنے خیالات کا اظہا ر کرتے ہوئے آر۔وی۔اے ۔ اردو سروس کو سراہتے ہوئے کہا کہ آر۔وی۔اے نے اُنکی زندگی میں بہت سی مثبت تبدیلیاں پیدا کی ہیں۔ علاوہ ازیں شرکاء نے اشعار،گیتوں ،اورخود کی لکھی تحریریں پیش کر کے کانفرنس کے آخری حصہ کو اور بی زیادہ رونق بخشی۔

بعد ازاں اس کانفرنس میں مسیحی مایہ ناز گلوکارجرویز ڈینیل نے اپنی خوبصورت آواز میں حمدیہ گیت ’’ کوئی تو ہے جونظامِ ہستی‘‘ سنا کر محفل میں سرور باندھ دیا اورننھے گلوکار ’’احسان‘‘ نے بابا بلھے شاہ کا کلام ترنم میں پیش کیا۔اور خوب داد وصول کی نیز سننے والے اس کلام سے خوب محظوظ ہوئے۔نیز اقبال کیمپ لاہور کینٹ کے سنڈے سکول کے بچوں نے ثقافتی گیت پرخوبصورت ثقافتی رقص پیش کر کے محفل کا سماں دوبالا کر دیا ۔کانفرنس کا اختتام فادر قیصر فیروز کے کلماتِ تشکر سے ہوا۔مس ارم اور عامر یعقوب نے نظامت کے فرائض م